You are here: Home » انسانی حقوق » ساہیوال سانحے کے ذمہ داران کو سخت سزا دی جائے گی، عمران خان
ساہیوال سانحے کے ذمہ داران کو سخت سزا دی جائے گی، عمران خان

ساہیوال سانحے کے ذمہ داران کو سخت سزا دی جائے گی، عمران خان

پاکستان کے وزیر اعظم عمران خان کا کہنا ہے کہ ساہیوال ميں پيش آنے والے واقعے پر عوام میں پایا جانے والا غم و غصہ جائز اور قابل فہم ہے۔ عمران خان کے بقول قطر سے واپسی کے بعد وہ ذمہ داران کو سخت سزا دلوائیں گے۔

اپنی ٹوئیٹ میں عمران خان نے لکھا ہے کہ وہ قوم کو یقین دلاتے ہیں کہ قطر کے سرکاری دورے سے واپسی پر وہ اس واقعے کے ذمہ داران کو عبرت ناک سزا دیں گے۔ اس کے علاوہ وہ پنجاب پولیس کے پورے ڈھانچے کا جائزہ لیں گے اور اس کی اصلاح کا آغاز بھی کریں گے۔

پولیس کے انسداد دہشت گردی کے محکمے کی جانب سے کہا گیا کہ انہوں نے ایک شادی شدہ جوڑے اور ان کی تیرہ سالہ بیٹی سمیت چار افراد کو پولیس مقابلے کے دوران گزشتہ ہفتے ہلاک کر دیا تھا۔ اس واقعے میں بچ جانے والے تین کم سن بچوں نے بھی ايک ویڈیو میں کچھ کہا، جو قانونی نافذ کرنے والے ادارے کے بيان کی نفی کرتا ہے۔ یہ ویڈیو سوشل میڈیا پر وائرل ہو گئی اور عوام کی جانب سے اس واقعے پر شدید غم اور غصے کا اظہار کیا گیا۔
عمران خان کی جانب سے کہا گیا ہے کہ وہ اس واقعے کے خلاف فوری کارروائی کرائيں گے۔ اتوار کو پولیس کی جانب سے کی جانے والی فائرنگ سے ہلاک ہونے والے خلیل اور اس کی اہلیہ نبیلہ، ان کی بیٹی عریبہ اور پڑوسی ذیشان کے نماز جنازے کے وقت کہا گیا کہ پولیس در اصل ذیشان کا پیچھا کر رہی تھی اور ان سے غلطی سے شادی شدہ جوڑا اور ان کی بیٹی مارے گئے۔

پاکستان کی وزیر برائے انسانی حقوق شیریں مزاری نے بھی آج اس حوالے سے ایک ٹوئیٹ میں لکھا، ’’چاہے راؤ انوار ہو یا ساہیوال کا سانحہ، بطور حکومت یہ ہمارا فرض ہے کہ ’پولیس مقابلوں‘ ميں لوگوں کو ہلاک کيے جانے کی روایت کو ختم کیا جائے۔ سابقہ حکومتیں جس چیز کی حوصلہ افزائی کرتی تھیں اب اس کا خاتمہ ہونا چاہیے اور قانون کی بالادستی ہونی چاہیے۔‘‘

Deutsche Welle

Share Button

Leave a Reply

Scroll To Top