You are here: Home » مضامین » برگر شکایت
برگر شکایت

برگر شکایت

AMER ISHAQ SOHARWARDI
اچھا دیکھیں ،،سمجھیں اگر آپ طاقتور نہیں ہیں ،،تو اغوا ہو سکتے ہیں،،آپ کو کوئی بھی ڈرا دھمکا سکتا ہے ،،وڈیرہ ،،چوھدری ،،خان یا واجہ سب کا آپ پر اختیار ہے ، نہ صرف ان کا بلکہ ان کے نوکروں کا ،،خانساماوں کا ، ڈرائیوروں کا مالیوں کا ،سیکیورٹی گارڈز کا اور پھر آپ کے پاس اس کی داد رسی کا کوئی طریقہ نہیں ہوتا۔ کیونکہ تھانہ ان کا ، پولیس ان کی ، قانون ان کا ۔ وہ جو کہ دیں وہی روزنامچے میں لکھا جائیگا ۔ اور ہاں کمال یہ ہے دور جاہلیت کی عظیم نشانی یعنی اگر آپ کسی جرگے کے سامنے پیش ہو تو وہ یا انکا کوئی پالتو وہاں پر منصف ہوگا۔
میں آفرین پیش کرتا ہوں اس بہن کو جس نے اپنی بہن کو فیس بک پر التماس دوستی کرنے والے کی نوکری ختم کرا دی ۔ یہ آج کے دور کا عظیم مقدمہ ہے ، اس سے وہ تمام مقدمے جنم لیں گے ،جن سے اس معاشرے مین تمام عورتوں کو یکساں ،مساوی حقوق مل جائینگے ۔ جرگے کے اندھے فیصلوں سے لٹنے والی عصمتیں ،،تھانے کے اندھیرے کمروں میں مجبور آہیں اور سسکیاں ، سینکڑوں لوگوں کے سامنے انصاف کی دہائی دیتی بہنیں ۔ اور کیمروں کے سامنے خود سوزی کرنے والی احتجاجی خواتین ،،سب کو اس مقدمے سے انصاف مل جائےگا۔
وہ عورتیں جو مقدس کتابوں سے بیاہ دی گئیں ان کو آزادی مل جائیگی ،،جن معصوموں کو ونی کر دیا گیا ان کی رہائی ہو جائیگی اور کاری کر دی گئیں ان کے مرے ہوے چہروں پر شادابی آجائیگی ۔ کتنا آسان ہوتا ہے با اختیار ہو کر کوئی بھی کام کر نا یا کرانا ۔ بس کسی با اختیار کو فون گھمایا اور کہانی ختم۔ مگر ان کروڑوں عورتوں کا کیا ہوگا جو اسی معاشرے مین عورت ہونے کی سزا بھگت رہی ہیں ۔جن کی صبح اور شام ،،بس رنج و آلام میں ڈوبی ہوئی ہے ۔ جو ہر روز مرتی ہیں اور ہر روز زندہ ہوتی ہیں ۔
جلی ہوئی عورتوں سے ہمدردی کی فلم بنانا اچھا ہے ۔ لیکن اس فلم سے آسکر تو مل سکتا ہے ، ان عورتوں کے حالت نہین بدل سکتی ، وہ بھاگ جلی ، تو پہلے بھی ویسی ہی تھیں اور اب بھی ویسی ہی ہیں ۔ برگر ہونا ان کے نصیب میں کہاں ، ان کے نصیب میں تو بند کباب بھی نہیں بلکہ پیٹ بھر کے کھانا بھی نہیں ۔ چلیں ہم بھی ایک ایف ٓئی آر درج کرتے ہیں ۔ ملک کے قانون میں ایک ایسی تبدیلی جس کم از کم ریاست ملک کے تمام بھوکوں کو کھانا کھلانے کی تو پابند ہو جائے۔ چلیں ایک اور تبدیلی کر لیں ،،کہ ریاست تمام بے گھروں کو چھت دے دے ۔ اور ہاں ایک اور تبدیلی کرتے ہیں ، کہ ہم میں اتنی انسانیت جاگ جائے ، اتنی اخلاقیات پیدا ہو جائے ، اتنی جرات پیدا ہوجاے ، ہمارا شعور اتنا بلند ہوجائے کہ ہم پہلے روٹی بانٹیں پھر انعام وصول کریں ،،ورنہ یہ کام تو اس سے پہلے بھی کئ مفاد پرست مختلف نام رکھ کر کر چکے ہیں۔

Share Button

Leave a Reply

Scroll To Top